#ffffff#81d742#eeee22

admin

About admin

This author has not yet filled in any details.
So far admin has created 134 entries.

غلط

غلط

 

ارشاد عرشی ملک

 

 

ہم نے مانا دل میں آجاتے ہیں کچھ ارماں غلط

آپ کا اُن کو کُچل دینے کا ہے فرماں غلط

 

 

ہم کو تو اقرار ہے بے شک گنہگاروں میں ہیں

آپ کا بھی زعم ،بابت پاکیِ داماں غلط

 

 

رت جگوں کی اب نہ طاقت ہے نہ فرصت نہ دماغ

کھٹکھٹایا تو نے دروازہ،غمِ جاناں غلط

 

 

کچھ تو ہو […]

Rate: 0
By |June 23rd, 2014|غزلیں|0 Comments

اپنی خالی جیب کا دُکھ اس قدر گہرا نہ تھا

      میں کہی گئی غزل1976

 

ارشاد عرشی ملک

 

اپنی خالی جیب کا دُکھ اس قدر گہرا نہ تھا

نِرخ جب چہرے پہ یوں ہر شخص نے لکھا نہ تھا

 

اب کے تو لگتا ہے ،اپنے ہاتھ سے خود بھی گئے

آج سے پہلے کبھی دل آج سا تنہا نہ تھا

 

مجھ کو تاریکی میں رکھنے پر مُصر تھا مستقل

بھید […]

Rate: 0
By |June 23rd, 2014|غزلیں|0 Comments

سوچو ذرا

سوچو ذرا۔۔

 

( پاکستان میں ،سیلابوں ،دھماکوں،ڈاکوں،مہنگائی اور دیگر آفات کے پس منظر میں ایک درد مندانہ پیغام)

 

ارشاد عرشیؔ ملک اسلام آباد پاکستان

arshimalik50@hotmail.com

 

بد سے بد تر کس لئے حالات ہیں سوچو ذرا

کیوں مسلسل نت نئی آفات ہیں سوچو ذرا

 

کیوں طلوع ہوتا نہیں سورج تمہارے واسطے

کس لئے منحوس سے دن رات ہیں سوچو ذرا

 

تم کو کس […]

Rate: 0
By |June 23rd, 2014|غزلیں|0 Comments

سُن لو مری کہانی

سن لو مری کہانی

ارشادعرؔشی ملک اسلام آباد پاکستان

arshimalik50@hotmail.com

 

فرصت  ہے  گر  بلا  لو  ،  سن  لو  مری  کہانی

کل تک  نہ  رہ  سکے گا  ،  تِڑ کے گھڑے  کا  پانی

 

گو  زندگی  میں  تم  نے  میری  نہ   قدر  جانی

افسوس  کل  کرو  گے  بے  کار   نوحہ  خوانی

 

بھڑکے  نہ  مثل  شعلہ ،  آیا  نہ  لب   پہ  شکوہ

گیلی   سلگتی   لکڑی    […]

Rate: 0
By |June 23rd, 2014|غزلیں|0 Comments

سب سہارے مُسترد

سب سہارے مسُترد

 

ارشاد عرشی ملک

 

Arshimalik50@hotmail.com

 

اِک خدا کا ہے سہارا،سب سہارے مسترد

کر دیے طوفان میں ہم نے کنارے مسترد

 

غیر کے در کی غُلامی ،موت عاشق کے لئے

خواب میں بھی غیر کو گر ،وہ پکارے،مسترد

 

چاہیے دل میں رہے ہر وقت عُقبیٰ کا خیال

جو بھی دُنیا میں بہت پاوں پسارے،مسترد

 

سب اصول اور قاعدے ،اس دور میں بدلے […]

Rate: 0
By |June 23rd, 2014|غزلیں|0 Comments