اگر  رہ  گئی   نماز

 

ارشاد  عرؔشی  ملک

 

         لغزش  بہت   بڑی   ہے   اگر  رہ  گئی   نماز       

  پُرسش  بہت   کڑی  ہے  اگر  رہ  گئی  نماز

 

     لذت  جو  تم کو  دُور  سے لگتی  ہے  رس  بھری     

   بے  حد  گلی  سڑی   ہے   اگر  رہ  گئی  نماز

 

 

آسان   ہے   حساب   نمازیں   اگر  درست    

     سولی   وہاں  گڑی   ہے   اگر   رہ  گئی  نماز      

    

رونا   ہے  ، چیخنا  ہے  ،  پٹخنا   ہے   سر   وہاں     

    لمبی   ہی  گڑ  بڑی  ہے   اگر  رہ  گئی   نماز       

     

بدبُو سے  جس کی  ناک  پہ رکھ  لیں سبھی  رُومال      

    دُنیا    وہ    اوجڑی   ہے   اگر  رہ  گئی  نماز         

       

یہ  لذتیں  یہ   مال  یہ   جاہ  و  جلال  سب     

     کچرے  کی  اک  دھڑی ہے  اگر  رہ گئی  نماز           

        

              دنیا   کے  کار  زار  میں  یہ  تیری   چوکڑی    

                     اندھے  کی  چوکڑی  ہے  ،  اگر  رہ  گئی   نماز            

            

            شاپنگ کے  شوق  میں  توُ   نمازیں  قضا  نہ کر    

         دنیا  میں  کیوں  گڑی  ہے ؟  اگر  رہ  گئی  نماز؟ 

            

            میچنگ  کے  چاؤ  میں  کئی  گھنٹے  گذر  گئے     

        اور  ضد  پہ  تُو  اَڑی  ہے  ،  اگر  رہ گئی  نماز؟ 

            

                  چھوٹی  خطا    نہ   جان    ُتو   ترکِ   نماز   کو        

         سب  سے  یہی   بڑی  ہے   اگر  رہ  گئی  نماز

              

                 یہ  با رشوں  کے  لُطف  یہ  جھڑیاں  وہاں  نہیں        

          اشکوں  کی  اک  جھڑی  ہے  اگر   رہ  گئی  نماز  

           

                مانا   تری   کلائی    پہ   ہے   قیمتی  گھڑی       

           بے  کار  یہ  گھڑی   ہے  اگر  رہ  گئی  نماز 

                

              لذاتِ  اُخروی  کے   مقابل  پہ   یہ جہاں      

         پل  بھر کی پُھلجھڑی  ہے  اگر  رہ گئی   نماز

 

مسلم ہوں میں بہشت مرے باپ کا ہے گھر

بے کار یہ”  تڑی “ہے اگر رہ گئی نماز

            

               اب  شاعری کو  چھوڑ  دے  عرؔشی  نماز  پڑھ         

               کس شغل  میں  پڑی  ہے  ؟  اگر   رہ گئی  نماز؟

          

Rate: 0